Muhammad Hafiz Saeed

لاہور)  مذہبی و سیاسی رہنماﺅںنے بھارتی خفیہ ایجنسیوں کی طرف سے میانمار میں بڑے پیمانے پر ہتھیاروں کی فراہمی اور چالیس لاکھ مسلمانوں کو شہید کرنے) کے منصوبہ میں بھارت کے ملوث ہونے پر شدید ردعمل ظاہر کیا ہے اور کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی طرح میانمار میں بھی بڑے پیمانے پر دہشت گردی کروا رہا ہے اور خطہ کا تھانیدار بننے کے چکر میںاس نے پورے جنوبی ایشیا کے امن کو داﺅ پر لگا رکھا ہے۔ حکمرانوں کو چاہیے کہ وہ بھارت کو دہشت گرد ملک قرار دلوانے کیلئے اقوام متحدہ میں قرارداد پیش کریں اور مسلم دنیا کو ساتھ ملا کر بھارتی دہشت گردی کے آگے بند باندھنے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔ نہتے مسلمانوں کے قتل عام،مساجدو مدارس کی شہادت اور مسلمانوں کی بستیوں کو راکھ کاڈھیربنائے جانے پر مسلم امہ کو کسی صورت خاموش نہیں رہنا چاہیے۔میانمار کے مسلمان اپنی عزتوں و حقوق کے تحفظ کیلئے قربانیوں و شہادتوں کا راستہ اختیار کریں۔

ان خیالات کا اظہار امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید،ممتاز عسکری دانشور جنرل (ر) حمید گل، جماعةالدعوة سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، تحریک حرمت رسول  کے کنوینر مولانا امیر حمزہ، امیر جماعت اہلحدیث حافظ عبدالغفار روپڑی، تحریک آزادی جموں کشمیر کے چیئرمین حافظ سیف اللہ منصور، تحریک تحفظ قبلہ اول کے کنوینر مولانا محمد شمشاد احمد سلفی،امیر جماعةالدعوة آزاد کشمیر مولانا عبدالعزیزعلوی اور امیر جماعةالدعوة لاہور مولانا ابو الہاشم نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کیا۔انہوں نے کہاکہ بھارتی وزیر اعظم من موہن سنگھ کے اراکان برماکے دورہ کے بعد مسلم کش فسادات شروع ہونا اور بھارتی ایجنسیوں کی طرف سے بودھ انتہا پسندوں کو ہتھیاروں کی فراہمی کے حقائق منظر عام پر آنے کے بعد ہندوستان کے نام نہاد سیکولرازم کا چہرہ ایک بار پھر کھل کر دنیا کے سامنے بے نقاب ہو گیا ہے۔مسلمانوں کا قتل عام کرنے والے بدھسٹ دہشت گردوں کوبھارت سرکار اور دیگر اسلام دشمن قوتوں کی مکمل سرپرستی حاصل ہے۔ مسلمانوں کے خلاف عالمی پروپیگنڈے سے فائدہ اٹھا کر برما میں موجود متعصب بدھسٹ اور ہندوا نتہا پسندتنظیموں کے اراکین مسلمانوں کا صفایا کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں۔میانمار میں جاری ہولناک مظالم پر مسلم حکمرانوں کی خاموشی انتہا ئی افسوسناک ہے۔ مذہبی و سیاسی جماعتیں متحد ہو کر حکمرانوں پر دباﺅ بڑھائیں کہ وہ اراکان برما میں بھارتی مداخلت اور بدھسٹ دہشت گردوں کی سرپرستی کے خلاف عالمی سطح پر آواز بلندکریں۔کشمیریوں کی طرح برما اراکان کے مظلوم مسلمانوں کی عزتوں و حقوق کے تحفظ کیلئے بھی بھرپور تحریک چلانے کی ضرورت ہے۔انہوںنے کہاکہ کشمیر اور برما کے مظلوم مسلمانوں پر ہونے والے مظالم پر اقوام متحدہ، سلامتی کونسل نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔ مظلوم برمی مسلمانوں کی مدد کرنا پوری مسلم امہ پر فرض ہے

۔انہوں نے کہاکہ میانمار میں اسلحہ سپلائی اور بدھسٹ دہشت گردوں کی سرپرستی کر کے ہزاروں مسلمانوں کو شہید کروانے سے ثابت ہو گیا کہ بھارت نام نہاد سیکولر ریاست نہیں بلکہ ایک دہشت گرد ملک ہے جو اس خطہ میںمسلمانوں کا وجود برداشت کرنے کو تیار نہیں ہے۔اقوام متحدہ، سلامتی کونسل اورحقوق انسانی کے عالمی ادارے بھارتی دہشت گردی پر خاموشی اختیار نہ کریں۔ مسلمانوں کے معاملے میںانہیںدوہرے معیار کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے۔انہوںنے کہاکہ دنیا بھر کے مسلمانوں کو مضبو ط پیغام دینا ہوگا کہ اراکان برماکے مظلوم مسلمان اپنے آپ کو تنہا نہ سمجھیں،نہ صرف پاکستانی قوم بلکہ پوری امت مسلمہ برما کے مظلوم مسلمانوں کی پشت پر کھڑی ہے۔ مصائب میں گھرے مسلمانوں پر برما میں عرصہ حیات تنگ کر دیا گیا ہے ۔مسلم حکمرانوں کو کھل کر ان کی مدد کرنی چاہیے۔انہوںنے کہاکہ بھارت اپنی سرپرستی میں بدھسٹ دہشت گردوں سے اراکان برما کے بے گناہ مسلمانوں کو شہیدکروا رہا ہے۔ تمام مسلمان ایک جسم کی مانند ہیں، برما میں ہونے والے مظالم پرپوری امت مسلمہ سخت صدمہ سے دوچار ہے۔ دنیا میں جو مسلمان بھی اپنی آزادیوں کے لیے جدوجہد کررہے ہیں، ان شاءاللہ ان کو بہت جلد آزادیاں ملیں گی۔انہوںنے کہاکہ افسوسناک امر یہ ہے کی دشمنان اسلام کی طرح مسلم حکمرا ن بھی برماکے مسلمانوں پر ہونے والے مظالم پر خاموش بیٹھے ہیں۔ دنیا کے دیگر مقبوضہ اسلامی خطوں کی طرح میانمار کے مظلوم مسلمانوں کی آزادی کیلئے مسلم امہ کو بھرپور کردار ادا کرناچاہیے۔

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s